Two-day Fire Safety Training Course concludes with emphasizing its importance in our society

Home  /  Direct from the field  /  Current Page

In collaboration with Pakistan Red Crescent Society, Sindh, Fire Protection Association of Pakistan conducted a two-day FPAP certified Fire Warden training course at Hilal-e-Ahmer House, Clifton, Karachi from November 23-24, 2020. The course was also attended by 25 participants from various national organizations and multinational industries, where they received appropriate fire and safety training.

Addressing the closing ceremony, Kanwar Waseem, Provincial Secretary of Pakistan Red Crescent-Sindh and the Vice President of FPAP said that fire can be very dangerous. Fires not only destroy property, but can cause injuries or even death. A fire in the workplace can also mean the termination of jobs, as many of the offices and factories destroyed by fire in Pakistan are never rebuilt. One of the key strategies to maintaining a safe workplace and preventing fires is fire safety training. With proper training workers can eliminate fire hazards and respond quickly and efficiently if a fire breaks out. He stressed that first aid is as important as fire and safety training because those who know about first aid can respond effectively to any emergency, including fire. Kanwar Waseem added that the Red Cross and Red Crescent is the largest organization in the world and is also a pioneer of first aid training. He urged the participants to spread the message of availing the opportunity to receive fire safety and first aid training under one roof, and to obtain certification that is globally accepted.

 

Mr Tariq Moen Secretary, FPAP has initially given a brief presentation on FPAP activities. “FPAP is a voluntary and non-profit organization for promoting fire protection awareness and advancement”, said Moen. He especially thanked the Pakistan Red Crescent for its support in conducting these courses on its premises. Moen further said that without proper training a small occurrence can quickly grow to become a major incident with devastating outcomes. Everyone is at risk if there is a fire. However, there are some workers who may be at greater risk because of when or where they work, or because they’re not familiar with the premises or the equipment at the worksite. Fire safety training can teach workers how to recognize fire hazards, conduct a fire safety risk assessment, prevent a workplace fire, and respond if a fire occurs.

 

The closing the ceremony concluded with the distribution of certificates to the participants.

 

 

 

##############

دو روزہ فائر سیفٹی ٹریننگ کورس اختتام پزیر ہوا

ہمارے معاشرے میں زندگی کے ہر شعبے میں فرسٹ ایڈ اور فائر سیفٹی کی تربیت اہم ہے: سیکرٹری ایف پی اے پی

 

پریس ریلیز 24 نومبر ، 2020

 

 

کراچی(اسٹاف رپورٹر) پاکستان ریڈ کریسنٹ سوسائٹی سندھ کے اشتراک سے ، فائر پروٹیکشن ایسوسی ایشن آف پاکستان نے 23-24 نومبر،2020 ء کو ہلال احمر ہاؤس ، کلفٹن ، کراچی میں دو روزہ ایف پی اے پی سرٹیفائڈ فائر وارڈن ٹریننگ کورس کا انعقاد کیا۔ کورس میں مختلف قومی کمپنیوں اور ملٹی نیشنل صنعتوں کے 25 شرکاء نے شرکت کی اور آگ سے حفاظت پر تفصیلی تربیت حاصل کی۔ ختتامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان ریڈ کریسنٹ سندھ کے صوبائی سکریٹری اور ایف پی اے پی کے نائب صدر کنور وسیم نے کہا کہ کسی بھی قسم کی آگ بہت خطرناک ہوسکتی ہے۔ انکا مزید کہنا تھا کہ آتش زدگی نہ صرف املاک کو تباہ کرتی ہے بلکہ موت کا سبب بھی بن سکتی ہے۔ کام کی جگہ میں آتشزدگی ملازمتوں کے خاتمے کی وجہ بھی بن سکتی ہے ، کیوں کہ پاکستان میں آگ سے تباہ ہونے والے بہت سے دفاتر اور کارخانے پھر دوبارہ نہیں بن سکے۔ کام کے مقام  کو محفوظ رکھنے اور آگ کو روکنے کے لئے کلیدی حکمت عملی میں سے ایک آگ سے حفاظت کی تربیت ہے۔ مناسب تربیت سے کارکن آگ کے خطرات کو ختم کرسکتے ہیں اور اگر آگ لگ جاتی ہے تو فوری اور موثر انداز میں جواب دے سکتے ہیں۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ابتدائی طبی امداد اتنی ہی اہم ہے جتنی آگ اور حفاظت کی تربیت۔ کیونکہ جو لوگ ابتدائی طبی امداد کے بارے میں جانتے ہیں وہ آگ سمیت کسی بھی ہنگامی صورتحال کا موثر جواب دے سکتے ہیں۔ کنور وسیم نے مزید کہا کہ ریڈ کراس اور ریڈ کریسینٹ دنیا کی سب سے بڑی تنظیم ہے اور فرسٹ ایڈ کی تربیت کا علمبردار بھی ہے۔ انہوں نے شرکاء پر زور دیا کہ وہ ایک ہی چھت کے نیچے آگ سے حفاظت اور ابتدائی طبی امداد کی تربیت حاصل کرنے کے مواقع سے فائدہ اٹھانے کے پیغام کو عام کریں اور عالمی سطح پر قبول شدہ سرٹیفیکیشن حاصل کریں۔ اس سے قبل جناب طارق موئن سیکرٹری فائر پروٹیکشن ایسوسی ایشن آف پاکستان نے ابتدائی طور پر ایف پی اے پی کی سرگرمیوں کے بارے میں ایک مختصر پریزنٹیشن دی۔ طارق موئن نے کہا کہ ایف پی اے پی آگ سے بچنے والے شعور کو فروغ دینے کے لئے ایک رضاکارانہ اور غیر منافع بخش تنظیم ہے۔ انہوں نے خاص طور پر اپنے احاطے میں ان کورسز کے انعقاد میں تعاون کرنے پر پاکستان ریڈ کریسنٹ کا شکریہ ادا کیا۔ موئن نے مزید کہا کہ مناسب تربیت کے بغیر ایک چھوٹی سی واقعہ تباہ کن نتائج کے ساتھ ایک بہت بڑا واقعہ بن سکتا ہے۔ اگر آگ لگ جاتی ہے تو ہر ایک کو خطرہ ہوتا ہے۔ لہذا ، فائر سیفٹی کی تربیت کارکنوں کو آگ کے خطرات کو پہچاننے ، آگ سے حفاظت کے خطرے کی جانچ پڑتال کرنے ، کام کی جگہ پر لگنے والی آگ کو روکنے اور آگ لگنے کی صورت میں ردعمل ظاہر کرنے کے طریقوں کے بارے میں مفید معلومات مہیا کرتی ہے۔ اختتامی تقریب میں شرکاء میں اسناد بھی تقسیم کی گئیں۔


Seven Fundamental Principles